Connect with us

Urdu Poetry

Best Of Izzat Poetry In Urdu (2023)

izzat poetry, deep izzat poetry, rishte izzat poetry in urdu, izzat poetry in urdu, aurat ki izzat poetry, larki ki izzat poetry, aurat ki izzat poetry in urdu, aorat ki izat poetry, izzat poetry in urdu sms.

ustad ki izzat poetry, izzat poetry quotes in urdu, izzat poetry in english, izzat poetry urdu, Dear Share on social media app Facebook Instagram Twitter and Instagram Etc.

Izzat poetry sms

Izzat poetry

Jo mohabbat izzat de kar sajai jati hai
Yaqeen mano woh hamesha nibhai jati hai

جو محبت عزت دیکر سجائی جاتی ھے
یقین مانو وہ ہمیشہ نبھائی جاتی ھے

Mera Dil mohabbat se zida
Izzat ko passand karta hai

میرا دل محبت سے زیادہ
عزت کو پسند کرتا ھے

Izzat e nafas se har harf ko nicha rakho
Apni awaaz nahi zarf ko oncha rakho

عزتِ نفس سے ہر حرف کو نیچا رکھو
اپنی آواز نہیں ظرف کو اُونچا رکھو

Woh jo mere seeny pe sone ki zid kartey they
Aaj kahty hain haath choro, meri Izzat ka sawal hai

وہ جو میرے سینے پہ سونے کی ضد کرتے تھے
آج کہتے ہیں ہاتھ چھوڑو میری عزت کا سوال ھے

Aurat ki Izzat karna sekho
Kalko tumhare hathon Mein bhi beti ho gi

عورت کی عزت کرنا سیکھو
کل کو تمہارے ہاتھوں میں بھی بیٹی ہوگی

respect poetry in urdu text

Aurat ki Izzat wahi mard karta hai
Jiski parwarsh aik achi maan ne ki ho

عورت کی عزت وہی مرد کرتا ھے
جسکی پرورش ایک اچھی ماں نے کی ھو

Zindagi mein aise logon ka chunao karo
Jinko Izzat dene par woh khud se barh kar aapko Izzat den

زندگی میں ایسے لوگوں کا چناؤ کرو
جن کو عزت دینے پر وہ خود سے بڑھ کر آپ کو عزت دیں

Barhti Nahin izzat khud badhane se
Yeh ata hai Khuda Ki jise chahe nawaz de

بڑھتی نہیں عزت خود بڑھانے سے
یہ عطا ھے خدا کی جسے چاہے نواز دے


Hijab Poetry

Aapka jism Nahin aapki Izzat Aziz Hai
Main Apni umar ke ladkon Ki Tarah Nahin sochta
آپکا جسم نہیں آپکی عزت عزیز ھے
میں اپنی عمر کے لڑکوں کی طرح نہیں سوچتا

Unko namos bhi izzat bhi pazerai bhi
Mujhko rone Ko mayusar Nahin tanhai bhi

انکو ناموس بھی عزت بھی پذیرائی بھی
مجھکو رونے کو میسر نہیں تنہائی بھی

Na har ladka Izzat se khelne wala hota hai
Na Hi har ladki bad kirdar hoti hai

نہ ہر لڑکا عزت سے کھیلنے والا ہوتا ھے
نہ ھی ہر لڑکی بد کِردار ہوتی ھے

muhabbat or izzat poetry

Izzat per Lage daghon ko dhone Kaun aata Hai
Kisi ke Liye Apne Pyar Ko khone khona ta Hai

عَزت پر لگے داغوں کو دھونے کون آتا ھے
کسی کیلئے اپنے معیار کو کھونے کون آتا ھے

Vo raste tark Karti hun vo manjil chhod deti hun
Jahan izzat Nahin milti woh mahfil chhod deti hun

وہ راستے ترک کرتی ھوں وہ منزل چھوڑ دیتی ھوں
جہاں عزت نہیں ملتی وہ محفل چھوڑ دیتی ھوں

Kinaron se agar Meri khudi Ko thes pahunche to
Bhanwar Mein doob jaati hun woh Sahil chhod deti hun

کناروں سے اگر میری خودی کو ٹھیس پہنچے تو
بھنور میں ڈوب جاتی ھوں وہ ساحل چھوڑ دیتی ھوں

Mujhe mange hue saye hamesha dhup lagte Hain
So Suraj ke Gale padati hun badal chhod deti hun

مجھے مانگے ہوئے سائے ہمیشہ دھوپ لگتے ھیں
سو سورج کے گلے پڑتی ھوں بادل چھوڑ دیتی ھوں

Taluk yon Nahin rakhti kabhi rakha kabhi chhoda
Jise Main chhodti Hun FIR musalsal chhod deti hun

تعلق یوں نہیں رکھتی کبھی رکھا کبھی چھوڑا
جسے میں چھوڑتی ھوں پھر مسلسل چھوڑ دیتی ھوں

Vo raste tark Karti hun vo manjil chhod deti hun
Jahan izzat Nahin milti woh mahfil chhod deti hun

وہ راستے ترک کرتی ھوں وہ منزل چھوڑ دیتی ھوں
جہاں عزت نہیں ملتی وہ محفل چھوڑ دیتی ھوں

Kinaron se agar Meri khudi Ko thes pahunche to
Bhanwar Mein doob jaati hun woh Sahil chhod deti hun

کناروں سے اگر میری خودی کو ٹھیس پہنچے تو
بھنور میں ڈوب جاتی ھوں وہ ساحل چھوڑ دیتی ھوں

Mujhe mange hue saye hamesha dhup lagte Hain
So Suraj ke Gale padati hun badal chhod deti hun

مجھے مانگے ہوئے سائے ہمیشہ دھوپ لگتے ھیں
سو سورج کے گلے پڑتی ھوں بادل چھوڑ دیتی ھوں

..

Click to comment

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Urdu Poetry

Famous Allama Iqbal Poetry In Urdu 2 Line

Dr. Allama Iqbal was a philosopher, poet, & politician in India who is widely regarded as having inspired the Pakistan Movement. He is considered one of the most important figures in Urdu literature, with literary work in both the Urdu & Persian languages. Iqbal is admired as a prominent philosopher of Islam, & his poems and political activism continue to influence the culture and politics of Pakistan. He is officially recognized as the “national poet” of Pakistan.

allama iqbal poetry, allama iqbal poetry in urdu, allama iqbal poetry in urdu for students, allama iqbal poetry in urdu 2 lines for students, allama iqbal poetry in english, allama iqbal poetry in urdu for pakistan, allama iqbal poetry in urdu love, allama iqbal poetry in urdu text, allama iqbal poetry in urdu about pakistan.

allama iqbal poetry for pakistan, allama iqbal poetry on love, famous allama iqbal poetry in urdu, allama iqbal poetry love, allama iqbal poetry for love, allama iqbal poetry about pakistan in urdu, allama iqbal poetry 23rd march, allama iqbal poetry books, allama iqbal poetry urdu.

 

Allama Iqbal poetry in Urdu

 

allama iqbal

Tamanna dard e dil ki ho to kar khidmat faqiron ki
Nahi milta ye gauhar badshahon k khazinon me

تمنا دردِ دل کی ھوتو کر خدمت فقیروں کی
نہیں ملتا یہ گوہر بادشاہوں کے خزینوں میں

Yeh jannat mubarak rahy zahidon ko
K main aapka samna chahta hon

یہ جنت مبارک رھے زاہدوں کو
کہ میں آپکا سامنا چاہتا ھوں

Mir e arab ko aai thandi hawa jahan se
Mera watan wahi hay mera watan wahi hay

میرِ عرب کو آئی ٹھنڈی ھوا جہاں سے
میرا وطن وہی ھے میرا وطن وہی ھے

Tamanna dard e dil ki ho to kar khidmat faqiron ki
Nahi milta ye gauhar badshahon k khazinon me

تمنا دردِ دل کی ھوتو کر خدمت فقیروں کی
نہیں ملتا یہ گوہر بادشاہوں کے خزینوں میں

Amal se zindagi banti hay jannat bhi jahannam bhi
Ye khaki apni fitrat me na nuuri hay na naari hay

 

Allama Iqbal Poetry in Urdu for students

 

عمل سے زندگی بنتی ھے جنت بھی جہنم بھی
یہ خاکی اپنی فطرت میں نہ نوری ھے نہ ناری ھے

Haram e pak bhi Allah bhi Quraan bhi ek
Kuch badi baat thi hoty jo musalman bhi ek

حرمِ پاک بھی اللہ بھی قرآن بھی اِک
کچھ بڑی بات تھی ہوتے جو مسلمان بھی اِک

Ai tair e lahauti us rizq se maut achi
Jis rizq se aati ho parwaaz me kotahi

اے طائر لاھوتی اس رزق سے موت اچھی
جس رزق سے آتی ھو پرواز میں کوتاھی

Haya nahi hay zamany ki aankh me baaqi
Khuda kary k jawani teri rahy be daagh

حیا نہیں ھے زمانے کی آنکھ میں باقی
خدا کرے کہ جوانی تیری رھے بے داغ

Duniya ki mahfilon se ukta gaya hon ya rab
Kiya lutf anjuman ka jab dil hi bujh gaya ho

دنیا کی محفلوں سے اُکتا گیا ھوں یا رَب
کیا لُطف انجمن کا جب دل ہی بُجھ گیا ھو

Hazaron saal nargis apni be nuri pe roti hay
Badi mushkil se hota hay chaman me deeda war paida

ہزاروں سال نرگس اپنی بے نوری پہ روتی ھے
بڑی مشکل سے ھوتا ھے چمن میں دیدہ ور پیدا

Nasha pila k girana to sabko aata hay
Maza to tab hay k girton ko thaam le saqi

نشہ پلا کے گِرانا تو سب کو آتا ھے
مزہ تو تب ھے کہ گِرتوں کو تھام لے ساقی

Maana k teri deed k qabil nai hon main
Tu mera shauq dekh mera intazar dekh

مانا کہ تیری دید کے قابل نہیں ھوں میں
تو میرا شوق دیکھ میرا انتظار دیکھ

Sitaron se aagy jahan ur bhi hain
Abhi ishq k imtihaan ur bhi hain

ستاروں سے آگے جہاں اور بھی ھیں
ابھی عشق کے امتحاں اور بھی ھیں

Dhundta phirta hon main iqbal apny aapko
Aap hi goya musafir aap hi manzil hon main

 

Allama Iqbal Poetry in Urdu for youth

 

ڈھونڈتا پھرتا ہوں میں اقبالؔ اپنے آپکو
آپ ھی گویا مسافر آپ ھی منزل ھوں میں

Masjid to bana di shab bhar me iman ki hararat walon ne
Man apna purana paapi hay barson me namazi ban na saka

مسجد تو بنا دی شب بھر میں ایماں کی حرارت والوں نے
من اپنا پرانہ پاپی ھے برسوں میں نمازی بن نا سکا

Ishq bhi ho hijaab me husn bhi ho hijaab me
Ya to khud aashkar ho ya mujhy aashkar kar

عشق بھی ھو حجاب میں حُسن بھی ھو حجاب میں
یا تو خود آشکار ھو یا مجھے آشکار کر

Uqabi ruuh jab bedaar hoti hay jawanon me
Nazar aati hay unko apni manzil aasmanon me

عقابی رُوح جب بیدار ھوتی ھے جوانوں میں
نظر آتی ھے __ اِنکو اپنی منزل آسمانوں میں

 

Iqbal Poetry in Urdu 2 lines

 

Nahi hay na umeed iqbal apni kisht e viran se
Zara naam ho to ye mitti bahot zarkhez hay saqi

نہیں ھے نہ اُمید اقبال اپنی کشتِ ویراں سے
ذرا نم ھو تو یہ مٹی بہت زرخیز ھے ساقی

Bhari bazm me raaz ki baat kah di
Bada be adab hon saza chahta hon

بھری بزم میں راز کی بات کہہ دی
بڑا بے ادب ھوں سزا چاہتا ھوں

Na pucho mujhse lazzat khanaman barbad rahny ki
Nasheman saikdon maine bna kr phunk daaly

نا پوچھو مجھ سے لَذت خانماں برباد رھنے کی
نشیمن سیکڑوں میں نے بنا کر پھونک ڈالے

Saudagari nahi ye ibadat khuda ki hay
Aay be khabar jaza ki tamanna bhi chod de

سوداگری نہیں یہ عبادت خدا کی ھے
اے بے خبر جزا کی تمنا بھی چھوڑ دے

Aankh jo kuch dekhti hay lab pe aa sakta nahi
Mahv e hairat hon k duniya kiya se kiya ho jaegi

آنکھ جو کچھ دیکھتی ھے لَب پہ آسکتا نہیں
محوِ حیرت ھوں کہ دنیا کیا سے کیا ھو جائیگی

Yeh jannat mubarak rahy zahidon ko
K main aapka samna chahta hon

یہ جنت مبارک رھے زاہدوں کو
کہ میں آپکا سامنا چاہتا ھوں

Dil soz se khali hay nigah paak nahi hay
Phir is me ajab kiya k tu bebaak nahi hay

دل سوز سے خالی ھے نگاہ پاک نہیں ھے
پھر اس میں عجب کیا کہ تو بیباک نہیں ھے

Firqa bandi hay kahin aur kahin zatein hain
Kiya zamany me panapne ki yahi baten hain

فرقہ بندی ھے کہیں اور کہیں ذاتیں ھیں
کیا زمانے میں پنپنے کی یہی باتیں ھیں

 

Allama Iqbal Poetry in Urdu 2 Lines for students

 

Jinhen main dhundta tha aasmanon me zaminon me
Wo nikle mary zulmat khana e dil k makinon me

جنہیں میں ڈھونڈھتا تھا آسمانوں میں زمینوں میں
وہ نکلے میرے ظلمت خانہِ دل کے مکینوں میں

Tu qadir o aadil hay magr tery jahan me
Hain talkh bahot banda e mazdoor ki auqaat

تو قادر و عادل ھے مگر تیرے جہاں میں
ہیں تلخ بہت بندہِ مزدور کی اوقات

Aql ayyaar hay sau bhes badal leti hay
Ishq bechara na zahid hay na mulla na hakeem

عقل عیار ھے سو بھیس بدل لیتی ھے
عشق بیچارہ نہ زاہد ھے نہ مُلا نہ حکیم

 

Allama Iqbal Poetry in Urdu Love

 

Mir e arab ko aai thandi hawa jahan se
Mera watan wahi hay mera watan wahi hay

میرِ عرب کو آئی ٹھنڈی ھوا جہاں سے
میرا وطن وہی ھے میرا وطن وہی ھے

Mir Taqi Mir

Ye kaenat abhi na tamam hay shayad
k aa rahi hay damadam sada e kun faya kun

یہ کائنات ابھی نہ تمام ھے شاید
کہ آرہی ھے دمادم صداِ کُن فیکون

۔۔

Continue Reading

Urdu Poetry

Faiz Ahmed Faiz Best Poetry 2 Line

Faiz Ahmed Faiz was a Pakistani poet & a prominent member of the Communist Party of Pakistan. He was one of the leading literary figures of the Urdu language & is considered one of the greatest poets of the modern era. His poetry expressed themes of love, revolution, and social justice, and was widely popular in Pakistan & across the Indian subcontinent. He received numerous awards for his poetry, including the Lenin Peace Prize from the Soviet Union in 1962. Despite facing censorship and imprisonment, Faiz’s work continues to inspire political & social activism in the region.

faiz_ahmed faiz, faiz ahmed faiz poetry, faiz ahmed faiz best poetry, faiz ahmed faiz poetry in urdu, what was faiz_ahmed faiz takhalus, faiz_ahmed faiz books, faiz ahmed faiz ghazal, books of faiz ahmed. faiz.

heartbroken deep faiz ahmed faiz poetry, urdu poetry faiz ahmed faiz, books by faiz ahmed faiz, faiz ahmed faiz urdu poetry, shayari of faiz ahmed faiz, poetry of faiz ahmed faiz, faiz ahmed faiz shayari, faiz ahmed faiz takhalus.

 

Faiz Ahmad Faiz Poetry in Urdu

 

faiz ahmed faiz

Woh aa rahy hain wo aaty hain aa rahy honge
Shab e firaaq yeh kah kr guzar di ham ne

وہ آرہے ہیں وہ آتے ہیں آرہے ہونگے
شبِ فراق یہ کہہ کر گزار دی ہم نے

Aay to yuun k jaise hamesha thy mehrban
Bhuly to yuun k goya kabhi aashna na thy

آئے تو یوں کہ جیسے ہمیشہ تھے مہربان
بُھولے تو یوں کہ گویا کبھی آشنا نہ تھے

Kr rha tha gham e jahan ka hisaab
Aaj tum yaad be hisaab aay

کر رہا تھا غمِ جہاں کا حساب
آج تم یاد بے حساب آئے

Dono jahan teri mohabbat me haar k
Wo ja rha hay koi shab e gham guzar k

دونوں جہان تیری محبت میں ہار کے
وہ جا رہا ھے کوئی شبِ غم گزار کے

 

Faiz Ahmed Faiz best Poetry in Urdu

 

Wo baat saare fasane me jiska zikr na tha
Wo baat unko bahot na gavar guzri hay

وہ بات سارے فسانے میں جسکا ذکر نہ تھا
وہ بات ان کو بہت ناگوار گزری ھے

Gulon me rang bhare bad e nau bahar chaly
Chaly bhi aao k gulshan ka karobar chaly

گلوں میں رنگ بھرے باد نوبہار چلے
چلے بھی آؤ کہ گلشن کا کاروبار چلے

Maqam faiz koi raah me jacha hi nahi
Jo ku e yaar se nikly to su e dar chaly

مقام فیض کوئی راہ میں جچا ہی نہیں
جو کوئے یار سے نکلے تو سوئے دار چلے

 

Faiz Ahmed Faiz Poetry in Urdu 2 Lines

 

Tere qaul o qarar se pahly
Apne kuch ur bhi sahary thy

تیرے قول و قرار سے پہلے
اپنے کچھ اور بھی سہارے تھے

Uth kr to aa gaye hain teri bazam se magr
Kuch dil hi janta hay k kis dil se aay hain

اٹھ کر تو آگئے ہیں تیری بزم سے مگر
کچھ دل ہی جانتا ھے کہ کس دل سے آئے ھیں

Ye daagh daagh ujala ye shab gazida sahar
Wo intezar tha jiska ye wo sahar to nahi

یہ داغ داغ اُجالا یہ شبِ گزیدہ سحر
وہ انتظار تھا جسکا یہ وہ سحر تو نہیں

Ada e husn ki maasumiyat ko kam kr de
Gunahgar e nazar ko hijaab aata hay

اداِ حسن کی معصومیت کو کم کر دے
گناہ گار نظر کو حجاب آتا ھے

 

Faiz Ahmad Faiz Shayari

 

Yuun saja chand k jhalka tery andaaz ka rang
Yuun faza mahki k badla mery hamraz ka rang

یوں سجا چاند کہ جھلکا تیرے انداز کا رنگ
یوں فضا مہکی کہ بدلا میرے ہمراز کا رنگ

Chaman pe gharat e gul chin se jaany kiya guzri
Qafas se aaj saba be qarar guzri hay

چمن پہ غارتِ گلچیں سے جانے کیا گزری
قفس سے آج صبا بے قرار گزری ھے

Aur bhi dukh hain zamane me mohabbat k siwa
Rahatein aur bhi hain vasl ki rahat k siwa

اور بھی دکھ ھیں زمانے میں محبت کے سوا
راحتیں اور بھی ھیں وصل کی راحت کے سوا

 

Faiz Ahmed Faiz in Urdu

 

Gulon me rang bhare bad e nau bahar chaly
Chaly bhi aao k gulshan ka karobar chaly

گلوں میں رنگ بھرے باد نوبہار چلے
چلے بھی آؤ کہ گلشن کا کاروبار چلے

Mir Taqi Mir

Maqam faiz koi raah me jacha hi nahi
Jo ku e yaar se nikly to su e dar chaly

مقام فیض کوئی راہ میں جچا ہی نہیں
جو کوئے یار سے نکلے تو سوئے دار چلے

۔۔

Continue Reading

Urdu Poetry

Best Of Mir Taqi Mir Poetry In Urdu 2 Line

Mir Taqi Mir was an 18th-century Indian Urdu poet, considered one of the leading poets of the Urdu language. He was born in Agra & lived most of his life in Delhi, where he composed most of his poetry. Mir was known for his lyrical and romantic poems, which often dealt with themes of love, devotion, and sorrow. His work is considered some of the finest in Urdu poetry & he continues to be widely read & respected in South Asia. His poetry has been translated into many languages & continues to influence Urdu literature & culture.

mir_taqi mir, mir_taqi mir poetry, ghazal mir_taqi mir, mir taqi mir ghazal, mir taqi m knowMir Taqi Mir Poetry poetry in urdu, mir taqi mir sad poetry, romantic mir taqi mir poetry, mir taqi mir biography in urdu, mir taqi mir shayari, mir taqi mir was often compared with.

Famous mir taqi mir poetry, mir taqi mir poetry in urdu pdf, mir taqi mir ghazal tashreeh class 9, mir taqi mir books, mir taqi mir tabsara, poetry of mir taqi mir, mir taqi mir best poetry.

Mir Taqi Mir Poetry On love

 

mir taqi mir

Gul ho mahtab ho aina ho khurshid ho mir
Apna mahboob wahi hay jo ada rakhta ho

گل ہو مہتاب ہو آئینہ ھو خورشید ھو میرؔ
اپنا محبوب وہی ھے ___ جو ادا رکھتا ھو

Yaad uski itni khuub nahi mir baaz aa
Nadan phir wo ji se bhulaya na jayega

یاد اسکی اتنی خوب نہیں میر باز آ
نادان پھر وہ جی سے بھلایا نہ جائیگا

Hoga kesi diwar k saae me pada mir
kiya kaam mohabbat se us aaram talab ko

ہوگا کسی دیوار کے سائے میں پڑا میر
کیا کام محبت سے اس آرام طلب کو

Mere rone ki haqeeqat jismein thi
Aik muddat tak wo kaghaz nam raha

میرے رونے کی حقیقت جس میں تھی
ایک مُدت تک وہ کاغذ نم رہا

Yuun uthe aah us gali se ham
Jaise koi jahan se uthata hay

یوں اٹھے آہ! اس گلی سے ھم
جیسے کوئی جہاں سے اٹھتا ھے

Umar gujari dawain karte mir
Dard e dil ka hua na chara hanooz

عمر گزری دوائیں کرتے میر
دردِ دل کا ھوا نہ چارہ ہنوز

 

Mir Taqi Mir Sad Poetry in Urdu

 

Mir bandhu se kam kab nikala
Mangna hay jo kuchh khuda se mang

میر بندوں سے کام کب نکلا
مانگنا ھے جو کچھ خدا سے مانگ

Ham hue tum hue k Mir hue
Uski zulfon k sab aseer hue

ھم ہوئے تم ہوئے کہ میر ہوئے
اس کی زلفوں کے سب اسیر ہوئے

Wo aaye bazm mein itna to humne dekha mir
Uske baad chiragon mein roshni na rahi

وہ آئے بزم میں اتنا تو ہم نے دیکھا میر
اسکے بعد چراغوں میں روشنی نہ رہی

Alam aaina hay jiska wo musawwir bemisal
Hay kiya suratein parde mein banata hai miyan

عالم آئینہ ھے جسکا وہ مصور بے مثل
ہائے کیا صورتیں پردے میں بناتا ھے میاں

Nazuki uske lab ki kiya kahiye
Pankhudi ek gulaab ki si hay

نازکی اسکے لب کی کیا کہیے
پنکھڑی اِک گلاب کی سی ھے

 

Mir Taqi Mir Poetry in urdu 2 lines

 

Ishq ek mir bhari patthar hay
Kab ye tujh na tavan se uthta hay

عشق اِک میر بھاری پتھر ھے
کب یہ تجھ ناتواں سے اٹھتا ھے

Pata pata buuta buuta haal hamara jaane hay
Jaane na jaane gul hi na jaane baagh to saara jaane hay

پتا پتا بوٹا بوٹا حال ہمارا جانے ھے
جانے نہ جانے گل ہی نہ جانے باغ تو سارا جانے ھے

Rote phirte hain saari saari raat
Ab yahi rozgar hay apna

روتے پھرتے ہیں ساری ساری رات
اب یہی روزگار ھے اپنا

Kiya kahun tumse main keh kiya hay ishq
Jaan ka rog hay bala hay ishq

کیا کہوں تم سے میں کہ کیا ھے عشق
جان کا روگ ھے بلا ھے عشق

Meer un neem baaz aankhon mein
Saari masti sharaab ki si hay

میر ان نیم باز آنکھوں میں
ساری مستی شراب کی سی ھے

 

Mir Taqi Mir ki Shayari ki khususiyat in Urdu

 

Ulti ho gain sb tadbiren kuch na dava ne kaam kiya
Dekha is bimari e dil ne aakhir kaam tamam kiya

الٹی ہو گئیں سب تدبیریں کچھ نہ دوا نے کام کیا
دیکھا اس بیماریِ دل نے آخر کام تمام کیا

Bulbul ghazal saraai aage hamare mat kar
Sab ham se seekhte hain andaaz e guftgu ka

بلبل غزل سرائی آگے ہمارے متکر
سب ھم سے سیکھتے ہیں اندازِ گفتگو کا

 

Meer Taqi Meer ki shayari in Urdu

 

Phirte hain mir khvaar koi puchta nahi
Is aashiqi me izzat e sadat bhi gayi

پھرتے ہیں میر خوار کوئی پوچھتا نہیں
اس عاشقی میں عزت سادات بھی گئی

Kaam the ishq mein bahut per mir
Ham hi fargh hue shatabi se

کام تھے عشق میں بہت پر میر
ھم ہی فارغ ہوئے شتابی سے

Tehzeeb Hafi

Munh khole to roj Hai Roshan julf bakhren Raat Hai
fir in toro se aashiq kyon kar Subah ko apni Sham Karen

منہ کھولے تو روز ھے روشن زلف بکھیرے رات ھے
پھر ان طوروِں سے عاشق کیوں کر صبح کو اپنی شام کریں

۔۔

Continue Reading

Urdu Poetry

Best Of Bahadur Shah Zafar Poetry 2 Lines

Bahadur Shah Zafar II was the last of the Mughal emperors in India, & was exiled by the British Indian government in 1857. He was a poet and a calligrapher, & his poetry, written primarily in Urdu & Persian, is considered some of the finest in the Indian subcontinent. Bahadur Shah Zafar was also a symbol of resistance against British rule, and his role in the Indian Rebellion of 1857 made him a symbol of Indian nationalism. After his exile, he lived out the rest of his life in Rangoon (now Yangon), Myanmar, where he died in 1862. Despite his relatively short reign, Bahadur Shah Zafar remains an important figure in Indian history & is remembered as a symbol of resistance against colonial rule.

bahadur shah zafar, bahadur shah zafar poetry, bahadur shah zafar ghazal, bahadur shah zafar tomb, poetry of bahadur shah zafar in urdu, bahadur shah zafar sons, bahadur shah zafar urdu poetry, 2 line bahadur shah zafar poetry in urdu, bahadur shah zafar poetry in urdu.

bahadur shah zafar history in urdu, bahadur shah zafar last ghazal, bahadur shah zafar ghazal in urdu, bahadur shah zafar father name,
bahadur shah zafar family now, bahadur shah zafar shayari, bahadur shah zafar poetry in urdu pdf, bahadur shah zafar last photo, love bahadur shah zafar poetry.

Bahadur Shah Zafar poetry in Urdu

bahadur shah zafar

Yeh chaman yunhi rahega ur hazaron bulbulen
Apni apni boliyan sab bol kr ud jaenge

یہ چمن یونہی رہیگا _  اور ہزاروں بُلبُلیں
اپنی اپنی بولیاں سب بول کر اُڑ جائیگے

Logon ka ehsaan hay mujhper ur tera main shukar guzar
Ter e nazar se tumne maara laash uthai logon ne

لوگوں کا احسان ہے مجھ پر اور تیرا میں شکر گزار
تیرِ نظر سے تم نے مارا لاش اٹھائی لوگوں نے

Ham hi unko baam pe laae ur hamin mahrum rahy
Parda hamary naam se utha aankh ladai logon ne

ہم ہی ان کو بام پہ لائے اور ہمیں محروم رھے
پردہ ہمارے نام سے اٹھا آنکھ لڑائی لوگوں نے

Lada kr aankh usse hamne dushman kr liya apna
Nigah ko naaz ko andaaz ko aabru ko mizhgan ko

لڑا کر آنکھ اس سے ہم نے دشمن کر لیا اپنا
نِگاہ کو ناز کو انداز کو آبرو کو مژگاں کو

Bahadur Shah Zafar famous poetry

Kitna hay bad naseeb zafar dafan k liye
Do gaz zameen bhi na mili ku e yaar me

کتنا ہے بدنصیب ظفر دفن کیلئے
دو گز زمیں بھی نہ ملی کوئے یار میں

Baat karni mujhy mushkil kabhi aisi to na thi
Jaisi ab hay teri mahfil kabhi aisi to na thi

بات کرنی  مجھے مشکل کبھی   ایسی تو نہ تھی
جیسی اب ھے تیری محفل کبھی ایسی تو نہ تھی

Be khudi me le liya bosa khata kijye muaaf
Ye dil e betaab ki saari khata thi main na tha

بے خودی میں لے لیا بوسہ خطا کیجئے معاف
یہ دلِ بیتاب کی ساری خطا تھی میں نہ تھا

Le gaya chin k kaun aaj tera sabr o qarar
Be qarari tujhy aay dil dil kabhi aisi to na thi

لے گیا چھین کے کون آج تیرا صبر و قرار
بے قراری تجھے اے دل کبھی ایسی تو نہ تھی

Mery surkh lahu se chamki kitny hathon me mehndi
Shahr me jis din qatl howa main eid manai logon ne

میرے سُرخ لہو سے چمکی کتنے ہاتھوں میں مہندی
شہر میں جس دن قتل ہوا میں عید منائی لوگوں نے

Na dunga dil use main ye hamesha kahta tha
Wo aaj le hi gaya ur zafar se kuch na howa

نہ دوں گا  دل اسے میں  یہ ہمیشہ  کہتا تھا
وہ آج لے ہی گیا اور ظفر سے کچھ نہ ھوا

Khuda k wasty zahid utha parda na kaabe ka
Kahin aisa na ho yaan bhi wahi kafir sanam nikley

خدا کے واسطے زاہد اٹھا پردہ نہ کعبہ کا
کہیں ایسا نہ ھو یاں بھی وہی کافر صنم نکلے

Koi kyun kesi ka lubhae dil koi kiya kesi se lagae dil
Wo jo bechty thay dava e dil wo dukan apni badha gaye

کوئی کیوں کسی کا لبھائے دل کوئی کیا کسی سے لگائے دل
وہ جو بیچتے تھے دوائےِ دل وہ دکان اپنی بڑھا گئے

Kiya pochta hay ham se tu ai shokh sitam gar
Jo tu ne kiye ham pe sitam kah nahi sakty

کیا پوچھتا ھے ھم سے تو اے شوخ ستمگر
جو تو نے کیا ھم پہ ستم کہہ نہیں سکتے

Kiya taab kiya majal hamari k bosa len
Labko tumhare labse mila kr kahe baghair

کیا تاب کیا مجال ھماری کہ بوسہ لیں
لب کو تمہارے لب سے ملا کر کہے بغیر

Ho gaya jis din se apny dil par usko ikhtiyar
Ikhtiyar apna gaya be ikhtiyari rah gayi

ہوگیا جس دن سے اپنے دل پر اُسکو اختیار
اختیار اپنا گیا بے اختیاری رہ گئی

Idhar khayal mery dil me zulf ka guzra
Udhar wo khata howa dil me pech o tab aaya

اِدھر خیال میرے دل میں زُلف کا گزرا
اُدھر وہ خطا ھوا دل میں پیچ و تاب آیا

Ja kahiyo mera naseem e sahar
Mera chain gaya meri neend gayi

جا کہیو میرا نسیمِ سحر
میرا چین گیا میری نیند گئی

Kah do in hasraton se kahin ur ja basen
Itni jagah kahan hay dil e dagh dar me

کہہ دو ان حسرتوں سے کہیں اور جا بسیں
اتنی جگہ کہاں ھے دلِ داغدار میں

Haath kyun bandhy mery chhalla agr chori howa
Ye sarapa shokhi e rang e hina thi main na tha

ہاتھ کیوں باندھے میرے چھلا اگر چوری ھوا
یہ سراپا  شوخیِٔ رنگِ حِنا  تھی  میں  نہ تھا

Ham apna ishq chamkaen tum apna husn chamkao
Hairan dekh kr aalam hamen bhi ho tumhen bhi ho

ھم اپنا عشق چمکائیں تم اپنا حسن چمکاؤ
حیران دیکھ کر عالم ہمیں بھی ہو تمہیں بھی ھو

Banaya ay zafar khailq ne kab insaan se behtar
Malak ko dev ko jinn ko pari ko hoor o ghilman ko

بنایا اے ظفر خالق نے کب انسان سے بہتر
ملک کو دیو کو جن کو پری کو حور و غلماں کو

Bhari hay dil mein jo hasrat kahun to kis se kahun
Suny hay kaun musibat kahun to kis se kahun

بھری ہے دل میں جو حسرت کہوں تو کس سے کہوں
سنے  ھے  کون  مصیبت  کہوں  تو   کس   سے  کہوں

Bulbul ko baghban se na sayyad se gila
Qismat me qaid likhi thi fasl e bahar me

بُلبُل کو باغباں سے نہ صیاد سے گِلہ
قسمت میں قید لکھی تھی فصلِ بہار میں

Bahadur Shah Zafar poetry do gaz zameen

But parasti jis se hove haq parasti aay zafar
Kiya kahun tujhse k wo tarz e parastish aur hay

بُت پرستی جس سے ہووے حق پرستی اے ظفر
کیا کہوں تجھ سے کہ وہ طرزِ پرستش اور ھے

Chahiye uska tassavur hi se naqsha khichna
Dekh kar tasveer ko tasveer phir khinchi to kiya

چاہیے اس کا تصور ہی سے نقشہ کھینچنا
دیکھ کر تصویر کو تصویر پھر کھینچی تو کیا

Daulat e duniya nahi jaany ki hargiz tery saath
Baad tery sab yahan aay be khabar bat jaega

دولتِ دنیا نہیں جانے کی ہرگز تیرے ساتھ
باد تیرے سب یہاں اے بےخبر بٹ جائیگا

Marg hi sehat hay uski marg hi uska ilaaj
Ishq ka bimar kiya jaany dava kiya cheez hay

مرگ ہی صحت ھے اسکی مرگ ہی اسکا علاج
عشق کا بیمار کیا جانے دوا کیا چیز ھے

Na thi haal ki jab hamen apny khabar rahy dekhty auron k aib o hunar
Padi apni buraiyon par jo mazar to nigah me koi bura na rha

نہ تھی حال کی جب ہمیں اپنے خبر، رہے دیکھتے اوروں کے عیب و ہنر
پڑی اپنی برائیوں پر جو نظر  تو نِگاہ میں کوئی بُرا نہ رہا

Tu kahin ho dil e diwana wahan pahunchega
Shama hogi jahan parwana wahan pahunchega

تو کہیں ہو دلِ دیوانہ  _ وہاں پہنچے گا
شمع ھو گی جہاں پروانہ وہاں پہنچے گا

Bahadur Shah Zafar last shayari

Zafar aadmi usko na janiyega wo ho kaisa hi sahab e fahm o zaka
Jise aish me yaad e khuda na rahi jise taish me khauf e khuda na rha

ظفر آدمی اس کو نہ جانیے گا، وہ ھو کیسا ہی صاحبِ فہم و ذکا
جسے عیش میں یادِ خدا نہ رہی، جسے طیش میں خوفِ خدا  نہ  رہا

Tehzeeb Hafi

Zafar badal k radif ur tu ghazal wo suna
K jis ka tujhse har ek sher intikhab howa

ظفر  بدل  کے  ردیف  اور  تو  غزل  وہ  سُنا
کہ جسکا تجھ سے  ہر اِک شعر انتخاب ھوا

Ye qisa wo nahi tum jisko qisa khwan se suno
Mery fasana e gham ko meri zabaan se suno

یہ قصہ وہ نہیں تم جسکو قصہ خواں سے سُنو
میرے  فسانہِ غمکو ___ میری  زباں  سے  سُنو

Bahadur Shah Zafar last Poetry in Urdu

Yeh chaman yunhi rahega ur hazaron bulbulen
Apni apni boliyan sab bol kr ud jaenge

یہ چمن یونہی رہیگا _  اور ہزاروں بُلبُلیں
اپنی اپنی بولیاں سب بول کر اُڑ جائیگے

۔۔

Continue Reading

Urdu Poetry

Best Of Tehzeeb Hafi Poetry In Urdu 2 Lines

tehzeeb hafi, tehzeeb hafi poetry, tehzeeb hafi poetry in urdu, hand written tehzeeb hafi poetry in urdu, tehzeeb hafi poetry whatsapp group link, tehzeeb hafi wikipedia, tehzeeb hafi shayari, tehzeeb hafi poetry status, tehzeeb hafi poetry in urdu 2 lines.

Tehzeeb Hafi poetry in Urdu

tehzeeb hafi

Main jis k sath kai din guzaar aaya hon
Wo mery sath basar raat kyun nahi krta

میں جس کے ساتھ کئی دن گزار آیا ھوں
وہ میرے ساتھ بسر رات کیوں نہیں کرتا

Mai ke kagaj ki ek kashti hun
Pahli barish hi aakhri hai mujhe

میں کہ کاغذ کی __ ایک کشتی ھوں
پہلی بارش ھی ___ آخری ھے مجھے

Sahra se hoke baagh me aaya hon sair ko
Haathon me phool hain mery paanv me reet hay

صحرا سے ہو کے__ باغ میں آیا ھوں ___ سیر کو
ہاتھوں میں پھول ہیں _ میرے پاؤں میں ریت ھے

Aasman ur zameen ki wusat dekh
Main idhar bhi hon udhar bhi hon

آسمان اور زمیں کی_ وسعت دیکھ
میں اِدھر بھی ھوں  اُدھر بھی ھوں

Main janglon ki taraf chal pada hon chod k ghar
Ye kiya k ghar ki udasi bhi saath ho gayi hy

میں جنگلوں کی طرف چل پڑا ھوں چھوڑ کے گھر
یہ کیا کہ گھر کی اداسی بھی _ ساتھ ھو گئی ھے

 

tehzeeb hafi poetry in urdu 2 lines

 

Isliye raushni me thandak hay
Kuch charaghon ko nam kiya gya hay

اس لیے __ روشنی میں ٹھنڈک ھے
کچھ چراغوں کو __ نم کیا گیا ھے

Ped mujhy hasrat se dekha karty they
Main jangal me paani laaya krta tha

پیڑ مجھے حسرت سے دیکھا کرتے تھے
میں جنگل میں __ پانی لایا کرتا تھا

Mirza Ghalib

Apni masti me bahta dariya hon
Main kinara bhi hon bhanwar bhi hon

اپنی مستی میں ____ بہتا دریا ھوں
میں کنارہ بھی ھوں بھنور بھی ھوں

Tamam na khuda sahil se door ho jaen
Samundaron se akely me baat krni hay

تمام ناخدا ساحل سے دور ہو جائیں
سمندروں سے اکیلے میں بات کرنی ھے

Wo jis ki chanv me pachchis saal guzary hain
Wo ped mujhse koi baat kyun nahi krta

وہ جسکی چھاؤں میں پچیس سال گزرے ہیں
وہ پیڑ مجھ سے کوئی بات کیوں نہیں کرتا

tehzeeb hafi poetry in urdu written

Dastaan hon main ek taveel magr
Tu jo sun le to mukhtasar bhi hon

داستاں ھوں میں اِک طویل مگر
تو جو سن لے تو مختصر بھی ھوں

Ye ik baat samajhny me raat ho gayi hy
Main usse jeet gaya hon k maat ho gayi

یہ اِک بات سمجھنے میں رات ہو گئی ھے
میں اس سے جیت گیا ہوں کہ مات ہو گئی ھے

Tera chup rahna mery zehn me kiya baith gaya
Itni awazeen tujhy den k gala baith gaya

تیرا چپ رہنا میرے ذہن میں کیا بیٹھ گیا
اتنی آوازیں تجھے دیں کہ گلا بیٹھ گیا

Main jis k sath kai din guzaar aaya hon
Wo mery sath basar raat kyun nahi krta

میں جس کے ساتھ کئی دن گزار آیا ھوں
وہ میرے ساتھ بسر رات کیوں نہیں کرتا

۔۔

Continue Reading

Urdu Poetry

Mirza Ghalib Best Poetry In Urdu 2 Lines

mirza ghalib, mirza ghalib poetry, mirza ghalib poetry in urdu, mirza ghalib sad poetry, mirza ghalib movie, mirza ghalib best poetry, mirza ghalib ghazals, ghazal mirza ghalib, mirza ghalib ghazal, mirza ghalib poetry in urdu 2 lines, mirza ghalib shayari.

mirza ghalib urdu, mirza ghalib ghazal in urdu, mirza ghalib love poetry, mirza ghalib books, mirza ghalib shayari in urdu, mirza ghalib quotes, mirza ghalib in urdu biography, mirza ghalib in urdu.

biography of mirza ghalib in urdu, love poetry mirza ghalib, mirza ghalib urdu ghazal, mirza ghalib birthday.

Mirza Ghalib Best poetry

mirza ghalib

Us sadagi per Kaun Na Mar jaaye ay Khuda
Ladte hain aur haath Mein talwar bhi Nahin

اس سادگی پہ کون نہ مر جائے اے خدا
لڑتے ہیں، اور ہاتھ میں تلوار بھی نہیں

Jaan di di Hui usi Ki Thi
Haq To Yun hai ki hak Ada Na hua

جان دی، دی ہوئی اسی کی تھی
حق تو یوں ھے کہ حق ادا نہ ہوا

Ghalib chhoti Sharab per Ab bhi Kabhi Kabhi
Pita hun roj e abr o mahtab mein

غالب چُھوٹی شراب پر اب بھی کبھی کبھی
پیتا ہوں روزِ ابر و شب مہتاب میں

Mirza Ghalib Poetry in Urdu 2 lines

Us sadagi per Kaun Na Mar jaaye ay Khuda
Ladte hain aur haath Mein talwar bhi Nahin

اس سادگی پہ کون نہ مر جائے اے خدا
لڑتے ہیں، اور ہاتھ میں تلوار بھی نہیں

Hajaron khwahishen aisi ke har khwahish pe Dum nikale
Bahut nikle Mere armaan lekin Fir bhi kam nikale

ہزاروں خواہشیں ایسی کہ ہر خواہش پہ دم نکلے
بہت نکلے میرے ارماں لیکن پھر بھی کم نکلے

Unke dekhe se jo a jaati Hai munh per raunak
Woh samajhte Hain Ki bimar ka Hal achcha hai

ان کے دیکھے سے جو آجاتی ھے منہ پر رونق
وہ سمجھتے ھیں کہ بیمار کا حال اچھا ھے

Kahte Hain jite Hain ummid pe log
Humko jeene Ki bhi ummid Nahin

کہتے ھیں جیتے ہیں امید پہ لوگ
ھمکو جینے کی بھی اُمید نہیں

Har aik baat pe kahte ho Tum ke tu kya hai
Tumhen kahu ki andaaz e guftgu Kya Hai

ہر ایک بات پہ کہتے ھو تم کہ تو کیا ھے
تمہیں کہو کہ یہ اندازِ گفتگو کیا ھے

Ishq mujhko Nahi wehshat Hi Sahi
Meri wehshat Teri shohrat Hi Sahi

عشق مجھکو نہیں وحشت ہی سہی
میری وحشت تیری شُہرت ہی سہی

Ghalib Poetry on love

Arz e niaz e Ishq Ke kabil nahi raha
Jis Dil pe naaz tha Mujhe wo dil nahi raha

عرضِ نیازِ عشق کے قابل نہیں رہا
جس دل پہ ناز تھا مجھے وہ دل نہیں رہا

Dekha Ke Jambish e lab hi tamam kar humko
Na de Jo bosa tu munh se kahin jawab to de

دیکھا کے جمبشِ لب ھی تمام کر ھمکو
نہ دے جو بوسہ تو منہ سے کہیں جواب تو دے

Tu fir na Intezar Mein nind Aaye Umar Bhar
Aane ka Ehd Kar Gaye Aaye Jo khwab Mein

تو پھر نہ انتظار میں نیند آئے عمر بھر
آنے کا عہد کر گئے آئے جو خواب میں

Khat likhenge Gharche matlab Kuchh Na ho
Ham to aashiq Hain tumhare Naam Ke

خط لکھیں گے گرچے مطلب کچھ نہ ھو
ھم تو عاشق ہیں تمہارے نام کے

Hua ke honth khole Saath Kalam To Aaye
Yeh reet jaisa badan andhiyon ke kam Aaye

ھوا کے ہونٹ کھولیں ساتھِ کلام تو آۓ
یہ ریت جیسا بدن آندھیوں کے کام آۓ

Koi virani si virani Hai
Dahsht ko dekh ke ghar yaad aaya

کوئی ویرانی سی ویرانی ھے
دشت کو دیکھ کے گھر یاد آیا

Mirza Ghalib Shayari Urdu

Jaan di di Hui usi Ki Thi
Haq To Yun hai ki hak Ada Na hua

جان دی، دی ہوئی اسی کی تھی
حق تو یوں ھے کہ حق ادا نہ ہوا

FIR Yahi rot ho aien mumkin Hai
Per Tera Intezar ho Ke Na ho

پھر یہی رُت ہو عین ممکن ھے
پر تیرا انتظار ہو کہ نہ ھو

Tumhare dar se uthae Gaye malal Nahin
Wahan to chhod Ke Aaye Hain hum ghubar apna

تمہارے ڈر سے اُٹھائے گئے ملال نہیں
وہاں تو چھوڑ کے آئے ہیں ہم غُبار اپنا

Rone se aur Ishq Mein bebak ho gaye
Dhoye gaye Ham itne ke bas paak ho Gaye

رُونے سے اور عشق میں بےباک ہو گئے
دھوۓ گئے ھم اتنے کہ بس پاک ہو گئے

Ghalib chhoti Sharab per Ab bhi Kabhi Kabhi
Pita hun roj e abr o mahtab mein

غالب چُھوٹی شراب پر اب بھی کبھی کبھی
پیتا ہوں روزِ ابر و شب مہتاب میں

Go haath Ko jambhesh Nahin aankhon Mein To dam Hai
Rahne do abhi saghar meena Mere aage

گو ہاتھ کو جمبش نہیں آنکھوں میں تو دم ھے
رہنے دو ابھی ساغر و مینا میرے آگے

Hue Mar Ke Ham Jo rusva hue Kyon Na ghark e dariya
Na Kabhi janaza uthata na kahin mazar hota

ہوئے مر کے ہم جو رُسوا ہوئے کیوں نہ غرقِ دریا
نہ کبھی جنازہ اُٹھتا نہ کہیں مزار ھوتا

Gham e hasti ka asad kis se ho juz Marg elaaj
Sham har rang Mein jalti Hai shahar hone tak

غمِ ہستی کا اسد کس سے ہو جُز مرگ علاج
شمع ہر رنگ میں جلتی ھے سحر ہونے تک

Zindagani Mein sabhi rang the maharami ke
Tujhko dekha To Main ehsas e ziya se nikla

زندگانی میں سبھی رنگ تھے محرومی کے
تجھکو دیکھا تو میں احساسِ زیاں سے نکلا

Bek raha hoon junoon Main Kya Kya Kuchh
Kuchh Na samjhe Khuda Kare Koi

بک رہا ہوں جنوں میں کیا کیا کچھ
کچھ نہ سمجھے خدا کرے کوئی

Jala Hai Jis Jahan Dil bhi jal Gaya Hoga
Kuredte ho ju ab Rakh justju kya hai

جلا ھے جسم جہاں دل بھی جل گیا ہوگا
کُریدتے ہو جو اب راکھ جستجو کیا ھے

Ham Kahan Ke Dana the ki hunar Mein yakta the
Woh sabab hua Ghalib dushman aasma apna

ھم کہاں کے دانا تھے کس ہُنر میں یکتا تھے
بے سبب ہوا غالب دشمن آسماں اپنا

Ham uske Jabr ka qissa tamam chahte hain
Aur uski tagh hamara ziwal chahti hai

ھم اسکے جبر کا قصہ تمام چاہتے ہیں
اور اسکی تیغ ہمارا زوال چاہتی ھے

Hui muddat ke Ghalib Mar Gaya per yaad aata Hai
Woh Har ek baat per kahna yun hota To Kya hota

ھوئی مُدت کہ غالبؔ مر گیا پر یاد آتا ھے
وہ ہر اِک بات پر کہنا کہ یوں ہوتا تو کیا ہوتا

Kyon jal gaya na tab e rukh yaar dekh kar
Jalta hun apni takat e didar dekhkar

کیوں جل گیا نہ تابِ رُخِ یار دیکھکر
جلتا ھوں اپنی طاقتِ دیدار دیکھکر

Ya Rab Woh Na samjhe hain na samjhenge meri baat
De Aur Dil unko Jo Na de mujhko zuban aur

یا رب وہ نہ سمجھے ہیں نہ سمجھیں گے میری بات دے اور دل انکو جو نہ دے مجھکو زبان اور

Ghalib Na Kar huzoor Mein Tu baar baar arz
Zahir Hai Tera HAL sab UN per kahe bagair

غالب نہ کر حضور میں تو بار بار عرض
ظاہر ھے تیرا حال سب اُن پر کہے بغیر

Bulbul ke karobar pe Hain khanda hay e Gull
Kahte Hain jisko Ishq khalal Hai dimagh ka

بُلبل کے کاروبار پہ ہیں خندہ ہائےِ گُل
کہتے ہیں جسکو عشق خلل ھے دماغ کا

Parveen Shakir

Kasidh ke aaty aaty khat Ek Aur lekh rakhun
Main jaanta hun jo woh likhenge jawab Mein

قاصد کے آتے آتے خط اِک اور لکھ رکھوں
میں جانتا ھوں جو وہ لکھیں گے جواب میں

Apni Gali Mein mujhko Na Kar dafan bad e Katal
Mere patte se khalq ko kyon Tera Ghar mile

اپنی گلی میں مجھکو نہ کر دفن بعدِ قتل
میرے پتے سے خلق کو کیوں تیرا گھر ملے

Bosa dete Nahi Aur Dil pe hai Har lihaja nigah
Ji Mein kahte Hain Ki muft Aaye To Mal achcha hai

بوسہ دیتے نہیں اور دل پہ ھے ہر لحظہ نگاہ
جی میں کہتے ہیں کہ مفت آئے تو مال اچھا ھے

Kya khoob Tumne gair ko bosa nahin diya
Bus chup raho hamare bhi munh mein zuban hai

کیا خوب تم نے غیر کو بوسہ نہیں دیا
بس چُپ رہو ہمارے بھی منہ میں زبان ھے

Nikalna khuld se Adam ka sunte aaye hain lekin
Bahut be aabru hokar Tere Kuchhe se ham nikale

نکلنا خُلد سے ادم کا سنتے آئے ہیں لیکن
بہت بے آبرو ہو کر تیرے کوچے سے ھم نکلے

Dil e nadan tujhe hua Kya Hai
Aakhir is Dard Ki dava kya hai

دلِ ناداں تجھے ھوا کیا ھے
آخر اس درد کی دوا کیا ھے

Aashiq hun Pa mashook farebi Hai Mera kam
Majnu ko bura kahti Hai Laila Mere aage

عاشق ہوں پا معشوق فریبی ھے میرا کام
مجنوں کو بُرا کہتی ھے لیلیٰ میرے آگے

Yeh masail e tasuf yeh Tera bayan Ghalib tujhe
Jujhe Ham wali samajhte Jo Na bada khwar hota

یہ مسائلِ تصوف یہ تیرا بیان غالب تجھے
تجھے ہم والی سمجھتے جو نا بادا خوار ہوتا

۔۔

Continue Reading

Trending

Copyright © 2022